HomeHome  PortalPortal  GalleryGallery  FAQFAQ  SearchSearch  MemberlistMemberlist  RegisterRegister  Log inLog in  

Share | 
 

 تسبيحات حضرت فاطمہ رضي اللہ عنھا

Go down 
AuthorMessage
Munawar
معاون
avatar

Posts : 72
Join date : 29.11.2010
Age : 34
Location : okara

PostSubject: تسبيحات حضرت فاطمہ رضي اللہ عنھا   Mon Nov 29, 2010 9:11 pm

تسبيحات حضرت فاطمہ رضي اللہ عنہ
حضرت علي رضي اللہ تعالي عنہ نے اپنے ايک شاگرد سے فرمايا ميں تمہيں اپنا اور فاطمہ کو جو حضور صلي اللہ عليہ وسلم کي سب سے زيادہ لاڈلي بيٹي تھيں قصہ سنائو۔
شاگرد نے کہا ضرور۔۔۔۔۔
فرمايا کہ وہ اپنے ہاتھ سے چکي پيستي تھيں، جس کي وجہ سے ہاتھ ميں نشان پڑ گئے تھے اور گھر کي جھاڑ پونچھ وغيرہ بھي خود کيا کرتي تھيں جس کي وجہ سے تمام کپڑے ميلے کچيلے رہتے تھے۔
ايک مرتبہ حضور صلي اللہ عليہ وسلم کےپاس کچھ غلام باندياں آئيں، ميں نے فاطمہ سے کہا کہ تم جاکر حضور صلي اللہ عليہ وسلم سے ايک خدمت گار مانگ لو تاکہ تم کو کچھ مدد مل جائے، وہ حضور صلي اللہ عليہ وسلم کي خدمت ميں حاضر ہوئيں، وہاں مجمع تھا شرم مزاج ميں بہت زيادہ تھيں، اس لئے شرم کي وجہ سے سب کے سامنے باپ سے بھي مانگتے ھوئے شرم محسوس ہوئي، واپس آگئيں، دوسرے دن حضور صلي اللہ عليہ وسلم خود تشريف لائے، ارشاد فرمايا۔
فاطمہ تم کل کس کام کے لئے آئي تھيں، وہ شرم کي وجہ سے چپ ہوگئيں۔
ميں نے عرض کيا حضور صلي اللہ عليہ وسلم ان کي يہ حالت ہے کہ چکي کي وجہ سے ہاتھوں ميں گٹے پڑ گئے اور مشک کي وجہ سے سينہ پر رسي کے نشان ہوگئے ہيں، ہر وقت کے کام کي وجہ سے کپڑے مليے رہتے ھيں، ميں نے سن سے کہا تھا کہ آپ کے پاس خادم آئے ہوئے ھيں، ايک يہ بھي مانگ ليں، اس لئے گئي تہين۔
حضرت فاطمہ رضہ اللہ عنہا نے عرض کيا يارسول اللہ ميرے اور علي کے پاس ايک ہي بسترہ ہے اور وہ بھي مينڈہ کي ايک کھال ہے، رات کو اس کو بچھا کر سو جاتے ھيں، صبح کو سي پر گھاس دانھ ڈال کر اونٹ کو کھلاتے ھيں۔
حضور صلي اللہ عليہ وسلم نے ارشاد فرمايا کہ بيٹي صبر کر، حضرت موسي کے پاس ايک چوغھ تھا، رات کو اس کوبچھا کر سوجاتے تھے، تو تقوي حاصل کرو اللہ سے ڈرو اور اپنے پروردگار کا فريضہ ادا کرتي رھ اور گھر کے کام کو انجام ديتي رہو اور جب سونے کے واسطے ليٹا کرے تو۔۔۔۔سبحان اللہ33مرتبہ۔۔۔۔الحمد33مرتبہ ۔۔۔ ۔اللہ اکبر33مرتبہ پڑھ ليا کرو۔
يہ خادم سے زيادہ اچھي چيز ھے، حضرت فاطمہ رضي اللہ عنہا نے عرض کيا ميں اللہ اور اس کے رسول صلي اللہ عليہ وسلم سے راضي ھوں۔
يعني جو اللہ اور حضور صلي اللہ عليہ وسلم کي رضا ميرے بارے ھوں، مجہے بخوشي منظور ہے، يہ تھي زندگي دوجہان کے بادشاہ کي بيٹي کي، اس واقعہ ميں جو اوپر ذکر کيا گيا صرف سونے کے وقت کا ذکر ہے دوسري حديثوں کے بعد
33
مرتبہ تينوں کلمے اور ايک مرتبہ لا الہ الا اللہ وحدہ لا شريک لہ لہ الملک ولہ الحمدہ وھوالحمد وھواعلي کلي شئي قدير بھي آيا ھے۔
Back to top Go down
ھارون رشید
ماہر
ماہر
avatar

Posts : 1369
Join date : 28.11.2010
Age : 44
Location : اوکاڑہ شریف

PostSubject: Re: تسبيحات حضرت فاطمہ رضي اللہ عنھا   Tue Nov 30, 2010 6:16 pm

جزاک اللہ الخیر jaza
Back to top Go down
http://friends.forums.com.bz/index.htm
 
تسبيحات حضرت فاطمہ رضي اللہ عنھا
Back to top 
Page 1 of 1

Permissions in this forum:You cannot reply to topics in this forum
 :: اسلام :: اسلامی معلومات-
Jump to: